Home / more / kids Corner

kids Corner

میجر طفیل محمد شہید۔نشانِ حیدر

تحریر : اختر سردار چودھری، کسووال میجر طفیل محمد شہید کے والد کا نام چودھری موج الدین تھا۔ جو دین پر سختی سے کاربند تھے اور دور و نزدیک صوفی کے نام سے جانے جاتے تھے۔ ان کا خاندان موضع کھرکاں ضلع ہوشیار پور (بھارت) کا رہائشی تھا۔ کاروبار کی …

Read More »

عقلمند وزیر کے حاسد دشمن

فاطمہ : صدیوں پہلے کی بات ہے کہ ملک یمن پر ایک بادشاہ حکومت کرتا تھا۔ ملک میں امن وامان تھا ، رعایا پر کسی قسم کا کوئی ٹیکس نہیں تھا، ہر طرف خوشحالی تھی ، جس کی وجہ سے درباری اور مشیر بادشاہ کو الٹی سیدھی باتیں بتاتے رہتے …

Read More »

وزیریااُستاد

شیخ معظم الٰہی : ایک بادشاہ کے دو بیٹے تھے اوردونوں ہی بیوقوف تھے۔ بادشاہ کاوزیر بہت سمجھدار اور نہایت ایماندار تھا۔ اس لئے بادشاہ کوئی بھی کام کرنے سے پہلے اپنے وزیر سے مشورہ لیتا تھا۔ دونوں شہزادے دل دہی دل میں وزیر سے حسد کرتے تھے ۔ ایک …

Read More »

ناشکری کی سزا

امیرہ سلیم :  ایک دن بارہ سنگھا جنگل میں ہری گھاس چررہا تھا، پیٹ بھرجانے پر اسے پیاس محسوس ہوئی۔ اس جنگل میں شفاف پانی کی ایک ندی بہتی تھی۔ بارہ سنگھا پیاس بجھانے کے لئے اس ندی کے کنارے پر جاپہنچا جب اس نے پانی پینے کے لئے منہ …

Read More »

نیلی پری

محمد ابوبکر ساجد :  ایک باغ میں بہت سے جانور رہتے تھے۔ ہر طرف رنگ برنگے پھول کھلے تھے۔ مزیدار میٹھے رس بھرے پھلوں سے یہ باغ لداہوا تھا۔ ہر منگل کو پرستان کی پریاں جانوروں کے ساتھ مزا اور موج مستی کرنے آتیں۔ خوشی سے جب پرندے چہچہاتے تو …

Read More »

مسٹر بکرے آپ کیسے ہیں

مسٹر بکرے آپ کیسے ہیں گائے اتراکربولی یہ سجاوٹ بیچنے کے بہانے ہیں زمردسلطان :  میں ایک دن بکرمنڈی کے پاس سے گزررہی تھی میں نے سوچا چلو جانوروں کا آج انٹرویو ہی کر لیتے ہیں سب سے پہلے ہم بکروں کے غول کی طرف گئے جہاں بکرے چار پائی …

Read More »

اشرفیوں کی تھیلی

سبط حسن :  محمود غزنوی کے زمانے میں غزنی کے ایک قاضی کے پاس اس کے ایک دوست تاجر نے اشرفیوں کی ایک تھیلی بطور امانت رکھوائی اور خود کاروبار کیلئے دوسرے ملک چلا گیا ۔ واپسی پر اس نے قاضی سے اپنی تھیلی واپس مانگی جو اس نے واپس …

Read More »

جنگلی لڑکا

جاوید اقبال :  بندروں کا پیچھا کرتے کرتے ہم گھنے جنگل میں داخل ہوگئے ۔ بندردرختوں کی شاخوں سے لٹکتے ایک درخت سے دوسرے درخت پر چھلانگیں لگاتے بھاگ رہے تھے اور ہم ان کے پیچھے بھاگ رہے تھے۔ بندروں کی شرارتوں کے بارے میں سناتھا۔ واقعی آج بندروں نے …

Read More »